Home / Tag Archives: Universe (page 3)

Tag Archives: Universe

ہائیپرون: نوزائیدہ کہکشاؤں کا سب سے بڑا سُپر کلسٹر 

ابتدائی کائینات میں کہکشائیں کیسے بنیں تھیں؟ اس سوال کے جواب کی تلاش میں فلکیات دانوں نے آسمان کے ایک تاریک حصے کا سروے کیا جس کے لئے انہوں نے ساؤتھ امریکی مُلک چیلے میں موجود بہت بڑی دربینوں کے ایک سلسلے کو استعمال کیا اور دور دارز کی اُن کہکشاؤں کو گنا جو کائینات کے آغاز میں وجود میں آئیں تھیں۔ اس تصویر میں پھیلی دور دراز کی (لگ بھگ اڑھائی ریڈشفٹ کی دوری پر) کہکشاؤں کے تجزئیے سے …

Read More »

گریوٹی کا تبسم

البرٹ آئین شٹائین کا نظریہء جنرل اضافیت جو آج سےایک سو سال پہلے شائع ہوا تھا، اس نظریے نے ثقلی عدسوں (Gravitational Lens) کے مظہر کی پیش گوئی کی تھی، دور دراز کی ان کہکشاؤں کی یہ بہ ظاہر شرارتی ہنسی والے چہرے کی شکل کی وجہ بھی یہی ثقلی عدسے ہیں، جن کا مُشاہدہ ھبل اور چندرا (دوربینوں) کے ذریعے ایکسرے اور عام روشنی کو ملا کے کیا گیا ھے۔ ان کہکشاؤں کو عرف عام میں چیشیرز کی بلی …

Read More »

سی فئیڈ آر-ایس پپ (RS Pup) ستارہ

اس تصویر کے مرکز میں آسمان پر سب سے اہم ترین ستارہ دکھایا گیا ھے۔ یہ اہم اسلئے بھی ہے کہ اتفاق سے اس ستارے کو ایک نہایت شاندار نیبولا گھیرے ہوئے ہے۔ مرکز میں گھٹتا بڑھتا ہوا ایک نہایت روشن ستارہ آر-ایس پپیز (RS Pup) ھے جو سورج سے کم و بیش دس گُنا زیادہ ماس رکھتا ھے اور اوسطاً سورج سے کوئی پندرہ ہزار گُنا زیادہ چمکدار ہے۔ در حقیقت یہ ستارہ چمک میں گھٹتے بڑھتے ستاروں کی …

Read More »

ٹرے پیزیم اورائین کے مرکز میں

اورائین نیبولا کے بیچ و بیچ اس خوبصورت تصویر کے مرکز میں جو چار عدد شدید گرم اور بہت بڑے ستارے آپ کو نظر آرہے ہیں ان کو ٹریپیزیم (Trapezium) کہتے ہیں۔ ان کے بارے میں عجیب سی بات یہ ہے کہ یہ چاروں ستارے ایک دوسرے سے ڈیڑھ نوری سال کے رداس میں پھیلے ہوئے ہیں یہ ستارے اس نیوبلا کے کثیف مرکز کے سب سے نُمایاں اور پُراثر اجسام ہیں۔ یہ یاد رہے کہ ہماری کہکشاں میں ستاروں …

Read More »

سُپرنوا 1994 ڈی اور غیرمتوقع کائینات

زمانوں پہلے بہت ہی دور ایک ستارہ تباہ ہوا، اس کو سُپر نوا 1994ڈی کہتے ہیں یہ تباہی اس تصویر میں کہکشاں این-جی-سی 4526 سے قدرے باہر کی طرف بائیں جانب نیچے کی طرف ایک روشن نشان کی صورت میں نظر آرہی ہے۔ سُپر نوا 1994ڈی کی سب سے دلچسپ بات یہ نہیں تھی کہ یہ دوسرے سُپر نووں سے کتنا مُختلف ھے بلکہ اس میں دلچسپی کا پہلو یہ تھا کہ یہ دوسرے سُپر نووں سے کسقدر مُشابہ تھا۔ …

Read More »

کریب نیبولا

کریب نیبولا چارلس میسئیے کی فہرست میں ایم-1 کے طور پر آتا ھے، یہ وہ فہرست ھے جس کو اٹھارہویں صدی عیسوی میں “چارلس میسئیے” نے ترتیب دیا اس فہرست کو مرتب کرنے کی وجہ یہ تھی کہ آسمان پر ایسے اجسام جو کامٹ نہیں ہیں لیکن لگتے وہ روئی کے گالوں کی طرح ہیں کو شناخت کیا جائے تاکہ لوگ ان کو کامٹ نہ سمجھ بیٹھیں۔ اس دور میں فلکیات کا اہم ترین مسئلہ ایسے کامٹس کی نشاندہی تھا …

Read More »

کہکشائی مرکز میں سنگیولیرٹی کی کثرت 

ماہرین فلکیات کے پاس بلیک ھولز کے مجموعے کے اظہار کے لئے کوئی معقول اسم جمع نہیں ھے، لیکن یقین کریں ان کو اس کی جلد ہی ضرورت پڑنے والی ھے۔ یہ تصویر چندرا ایکسرے رصد گاہ سے لی گئی ہے۔ اس تصویر میں سُرخ نشان ایک درجن کے قریب ایسے بلیک ھولز کی نشاندہی کررہے ہیں جو بائنری ستاروں کے سسٹم میں ہیں۔ ستارے عموماً دو یا دو سے زیادہ ہم جولی ستاروں کے ساتھ ہوتے ہیں جب ان …

Read More »

آئین شٹائین کی صلیب 

اس تصویر کو ذرا غور سے دیکھئے. کہکشاؤں کی اکثریت کا صرف ایک ہی مرکزہ ہوتا ہے — کیا اس کہکشاں کے چار مرکزے ہیں؟ اس سوال کے عجیب و غریب جواب نے ماہرین فلکیات کو یہ نتیجہ اخذ کرنے پر مجبور کردیا کہ اس تصویر میں اس کہکشاں کا مرکزہ تو سرے سے نظر ہی نہیں آرہا بلکہ مرکز میں چار پتیوں والے پتے کی مانند نظر آنے والا تو دراصل ایک دور دراز کا کوئی “کیوزار” ہے۔ پیش …

Read More »

مُشتری ھُشیار باش 

یہ چاند کے ساتھ ساتھ کیا ھے ؟ مُشتری اور اس کے چار چاند۔ زمین پر آسمان کا مُشاہدہ کرنے والوں نے 15 جولائی 2012 کی صبح صادق کو نظامِ شمسی کے سیاروں اور چاند کے قریب آنے کے مناظر سے لطف اُٹھایا۔ جبکہ دُنیا بھر کے لوگوں نے چمکدار مُشتری کو گھٹتے ہوئے چاند کے ہلال کے ساتھ دیکھا لیکن یورپ میں لوگوں کو مُشتری کو چاند کی ڈسک کے پیچھے غائیب ہوتے اور پھر ظاہر ہوتے ہوئے دیکھنے …

Read More »

این-جی-سی 3256 کا تصادم

کائینات میں ایک اندازے کے مطابق ایک سو بلین کہکشائیں موجود ہیں، اتنی بڑی مقدار کا مطلب ہے کہ یہ آپس میں ایک دوسرے سے جاٹکراتی بھی ہیں۔ ہماری کہکشاں کے ارد گرد دو کہکشائیں کبیر و صغیر مجیلینک کلاؤڈ Large and small Magellanic Cloud اس وقت بھی محو گردش ہیں جو بغیر دوربین کے بھی دیکھی جاسکتی ہیں اس کے علاوہ کم و بیش 50 اور چھوٹی کہکشائیں ملکی وے کے گرد گردش میں ہیں۔ اور ایک تو اس …

Read More »