Home / Tag Archives: science

Tag Archives: science

بلیک ہول، اسکیپ ولاسٹی اور غلط فہمیاں

بلیک ہول، اسکیپ ولاسٹی اور غلط فہمیاں

آپ، پاپولر سائینس کی کتاب پڑھ لیجئے یا یوٹیوب پر بلیک ہول سرچ کیجئے، دو ایک اعلیٰ درجےکے چینلز کو چھوڑ کے، سبھی لوگ کچھ اس قسم کی تعریف سے سامعین کو مسحور کرتے ہیں: بلیک ہول ایک ایسی جگہہ ہے جہاں مادہ سُکڑ سُکڑ کے اسقدر کثیف ہوجاتا ہے کہ وہاں سے فرار ممکن نہیں حتیٰ کہ روشنی کو بھی نہیں کیونکہ وہاں سے فرار کے لئے اسکیپ ولاسٹی روشنی کی رفتار سے بھی زیادہ چاہئے ہوتی ہے۔ بھائی …

Read More »

آخر چاند زمین کے ہی گرد کیوں گردش کرتا ھے؟

آخر چاند زمین کے ہی گرد کیوں گردش کرتا ھے؟ اکثر یہ ہوتا ھے کہ مُشکل سوال وہ ہوتے ہیں جو ظاہراً  بہت آسان لگتے ہیں، جیسے رات کو آسمان تاریک کیوں ہوتا ھے؟ روشنی کی رفتار  آخر ایک کائیناتی حد رفتار کیوں ھے ؟ وغیرہ “چاند زمین کے ہی گرد کیوں گردش کرتا ھے؟” یہ سوال بھی اسی قبیلے کا ایک فرد ہے۔ اس سوال سے ہمیں فزکس میں مشہور تین اجسام کے تجاذبی عمل دخل کے مسئلے کو …

Read More »

سورج کا ملکی وے کے گرد مدار

سورج کا ملکی وے کے گرد مدار

تعارف حال ہی میں ہماری کہکشاں کے مرکز میں موجود دیو ہیکل بلیک ہول کی تصویر کا چرچا رہا ہے جس سے ہر طرف سے سائنس کی تشہیر میں مشغول یوٹیوبرز اور سوشل میڈیا پر لکھنے والوں نے ایک تہلکہ مچارکھا ہے کہ دیکھیں سورج ملکی وے کے مرکز میں موجود بلیک ہول کے گرد گردش کرتا ہے وغیرہ وغیرہ جہاں موجودہ دور میں سائنس کی خبریں آن کی آن میں دُنیا بھر کی طرح پاکستان کے بھی ہر علاقے …

Read More »

یہاں تو سارے کا سارا جمال حیرت ہے

یہاں تو سارے کا سارا جمال حیرت ہے

(جیمز ویب ٹیلی اسکوپ سے لی گئی میری پسندیدہ تصویر) آج صُبح سے مصروفیت کی وجہ سے جیمز ویب کی تصاویر پر کچھ لکھ نہیں سکا، لیکن اب ایسا بھی نہیں کہ میں ان تصاویر سے آگاہ ہی نہیں تھا۔ کائینات کے حیرت کدے سے عکس لئے جائیں اور مجھ سا دیوانہ ان کے حُسن میں کھو نہ جائے یہ کیسے ممکن ہے۔ میں نے اس سلسلے میں بہت سارے حضرات کی پوسٹس دیکھی ہیں جس میں جنوبی رِنگ نیبولا …

Read More »

پہلا شخص جس نے خلا میں سفر کی تجویز پیش کی

خلا اور چاند پہ جانے والے پہلے شخص کے نام سے تو سبھی واقف ہوں گے مگر خلا میں جانے کی تجویز پیش کرنے والے پہلے شخص سے یقینا کافی لوگ ناواقف ہوں گے ۔ جان ولکنز (1672-1614) جو کہ ایک تھیالوجیکل اور فلسفی تھا اور اس نے اولیور کرومویل کی چھوٹی بہن روبینا سے شادی کی تھی ۔ علم اور فلسفے سے جنون کی حد تک لگاو ہونے کی وجہ سے وہ کئی علوم کا ماہر تھا ۔ اس …

Read More »

انسانی آنکھ کیسے کام کرتی ہے

انسانی آنکھوں کو اردو ادب میں بھی موضوع سخن بنایا گیا کسی نے اپنے محبوب کی آنکھوں کو سمندر سے تشبہ دی تو کسی نے اپنی آنکھوں کو برسات کا منبع قرار دیا کوئی تو اپنے محبوب کی آنکھوں میں اتر کر عشق کی گہرائیوں تک پہنچنا چاہتا تھا تو کوئی محبوب کی آنکھوں میں ڈوبنا چاہتا تھا ۔ بقول عدیم ہاشمی :- ؎ کیا خبر تھی تری آنکھوں میں بھی دل ڈوبے گا میں تو سمجھا تھا کہ پڑتے …

Read More »

پہلے ایٹم بم کی تیاری

گیتا میں لکھا گیا ہے کہ وشنو نے اپنے شہزادے کو کہا کہ میں اب موت ہوں جو دنیا کو لے ڈوبتی ہے   معروف ترین طبیعات دان رابرٹ اوپن ہائمر نے جب پہلا نیوکلیئر دھماکہ دیکھا تو اسے ہندو مذہب کی کتاب کا یہی فقرہ یاد آ گیا جس کا اس نے برملا اظہار بھی کیا۔ جرمنی میں نیوکلیئر فشن کا تجربہ ہو چکا تھا اور اب ہٹلر نیوکلیئر بم حاصل کر لینے کے نزدیک تھا۔ امریکہ نے فوری …

Read More »

این جی سی (NGC) کیٹلاگ

آپ نے اکثرفلکیاتی اجسام کے ناموں کے ساتھ NGCاور ایک نمبر لکھا دیکھا ہوگا۔ جیسے کہ انڈرومیڈا گلیکسی کے ساتھ NGC224 لکھا نظر آتا ہے۔ یہ این جی سی کیا ہے؟ NGCایک کیٹلاگ ہے جس کا پورا نام The New General Catalogue of Nebulae and Clusters of Starsہے۔ اس کیٹلا گ کو ’’جان لوئس ایمیل ڈریر‘‘ نے1888میں بنایا تھا۔ ڈنمارک سے تعلق رکھنے والے John Louis Emil Dreyerنے اپنی زندگی کا زیادہ تر حصہ آئرلینڈ میں گذارا اور وہی پر …

Read More »

گریوٹی کا تبسم

البرٹ آئین شٹائین کا نظریہء جنرل اضافیت جو آج سےایک سو سال پہلے شائع ہوا تھا، اس نظریے نے ثقلی عدسوں (Gravitational Lens) کے مظہر کی پیش گوئی کی تھی، دور دراز کی ان کہکشاؤں کی یہ بہ ظاہر شرارتی ہنسی والے چہرے کی شکل کی وجہ بھی یہی ثقلی عدسے ہیں، جن کا مُشاہدہ ھبل اور چندرا (دوربینوں) کے ذریعے ایکسرے اور عام روشنی کو ملا کے کیا گیا ھے۔ ان کہکشاؤں کو عرف عام میں چیشیرز کی بلی …

Read More »

ٹرے پیزیم اورائین کے مرکز میں

اورائین نیبولا کے بیچ و بیچ اس خوبصورت تصویر کے مرکز میں جو چار عدد شدید گرم اور بہت بڑے ستارے آپ کو نظر آرہے ہیں ان کو ٹریپیزیم (Trapezium) کہتے ہیں۔ ان کے بارے میں عجیب سی بات یہ ہے کہ یہ چاروں ستارے ایک دوسرے سے ڈیڑھ نوری سال کے رداس میں پھیلے ہوئے ہیں یہ ستارے اس نیوبلا کے کثیف مرکز کے سب سے نُمایاں اور پُراثر اجسام ہیں۔ یہ یاد رہے کہ ہماری کہکشاں میں ستاروں …

Read More »