Home / سحر عندلیب

سحر عندلیب

سحر عندلیب خود اپنی تلاش اور دنیا کو سمجھنے کی کوشش میں مصروف ایک طالب علم ہیں۔ شعبہ تعلیم سے تو وابستہ ہیں مگر سمجھتی ہیں کہ ابھی بھی علم کے سمندر کا ایک قطرہ بھی حاصل نہیں کر سکیں بہت کچھ سیکھنا باقی ہے اس بلاگ پر اور دیگر کئی ویب سائٹس اور فیس بک گروپس میں سحر عندلیب کے مضامین باقاعدگی سے پوسٹ ہوتے ہیں۔

پہلے ایٹم بم کی تیاری

گیتا میں لکھا گیا ہے کہ وشنو نے اپنے شہزادے کو کہا کہ میں اب موت ہوں جو دنیا کو لے ڈوبتی ہے   معروف ترین طبیعات دان رابرٹ اوپن ہائمر نے جب پہلا نیوکلیئر دھماکہ دیکھا تو اسے ہندو مذہب کی کتاب کا یہی فقرہ یاد آ گیا جس کا اس نے برملا اظہار بھی کیا۔ جرمنی میں نیوکلیئر فشن کا تجربہ ہو چکا تھا اور اب ہٹلر نیوکلیئر بم حاصل کر لینے کے نزدیک تھا۔ امریکہ نے فوری …

Read More »

ایک دلچسپ شرط

ستمبر 2018ء میں رک الاٹی اور روری ینگ کے مابین گفتگو اس وقت ایک نہایت دلچسپ موڑ پہ پہنچ گئ جب ینگ نے الاٹی سے پوچھا کہ وہ ایک تنگ و تاریک کمرے میں تنہا کتنا وقت جی سکتا ہے الاٹی کے ایک ماہ کہہ دینے پہ ان دونوں کے بیچ یہ شرط لگ گئی کہ اگر الاٹی نے ایک تنگ و تاریک کمرے میں کسی انسانی رابطے کے بنا ایک مہینہ گزار لیا تو وہ ایک لاکھ ڈالر کا …

Read More »

موبائل فون اور ذہنی تناو

اگر آپ میری طرح ا پنے دن کا آغاز اور اختتام موبائل فون کے استعمال سے کرتے ہیں تو یقینا اس عادت کے مضرصحت ہونے کا آپ کو یہ پڑھنے سے پہلےہی پتہ ہو گا ۔آپ نے یہ بھی مشاہدہ کیا ہو گا کہ سکرین کے سامنے کئی گھنٹے گزارنے کے بعد نیند کا آنا آپ کے لئے مشکل ہو جاتا ہے رات کو سونے سے پہلے کسی روشن سکرین کو دیکھنے کا سب سے پہلا اثر تو یہ ہوتا …

Read More »

بالبیک رومی سلطنت کی تاریخ میں سے سے بڑی اور متاثر کن عمارت

رومی سلطنت کی پوری تاریخ میں سب سے بڑی اور پر تکلف ترین عمارت جس کے متاثر کن کھنڈرات آج بھی موجود ہیں۔ بالبیک فونیشیا  کا ایک قدیم شہرہےجوکہ موجودہ لبنان میں بیروت کےشمال میں وادی بیکا میں واقع ہے 0 900 قبل مسیح سے پہلے بسنے والا بالبیک   فونیشیا کےآسمانی خدا بال اور اسکی ملکہ کی پرستش کے لیےقدیم دنیا میں ایک اہم زیارتی جگہ میں تبدیل ہو چکا تھا ( بالبیک کا مطلب وادی بیکا کا بادشاہ  بال) شہر کا مرکز …

Read More »

ابو الحسن علی ابن نافی یا زریاب تاریخ کے صفحات میں گمشدہ ایک شخصیت

ابو الحسن علی ابن نافی یا زریاب ایک ایرانی بحر العلوم تھا وہ ایک شاعر ، بہت بڑا موسیقار ، آرائش گر، فیشن ڈیزائنر ، مشہور شخصیت ، رحجان ساز ، حکومتی مشیر ، فلک شناس ، ماہر نباتات ، جغرافیہ دان اور پہلے پہل ایک سیاہ فام غلام تھا لفظ زریاب کا مطلب سیاہ پرندہ ہے ۔ زریاب ایک فصیح و بلیغ سیاہ فام تھا جس وجہ سے اسکا یہ نام مشہور ہوا ۔ زریاب بغداد میں پیدا ہوا اور …

Read More »

مصنوعی ذہانت سے انسانوں کو درپیش خطرات

کچھ قابل توجہ اور اہم لوگ جیسا کہ عظیم سائنسدان اسٹیفن ہاکنگ اور ایلون مسک نے تجویز کیا کہ مصنوعی ذہانت ممکنہ طور پر بہت خطرناک ہو سکتی ہے حتی ٰ  کہ ایک دفعہ ایلون مسک نےمصنوعی ذہانت کےخطرات کو شمالی کوریا کےجابر حکمران کے ساتھ موازنہ کر دیا۔ مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس کا بھی ماننا ہے کہ اس سے خبردار رہنے کی ضرورت ہے لیکن اگر برائی کا اچھی طرح سے سامنا کیا جائے تو اس پر غالب آیا …

Read More »

کیا ڈی این اے کے اندر معلومات کو محفوظ کیا جا سکتا ہے؟

جینیٹکس انجنئیرنگ اور جین ایڈٹنگ ٹیکنالوجی اب دنیا بھر کی کلاسیفائڈ لیبارٹریز میں مقبولیت اختیار کرتی جا رہی ہے اور اس پہ زیادہ سے زیادہ کام ہو رہا ہے مگر اس میدان میں عجیب ترین کام ایک سولہ سالہ فرانسیسی لڑکے نے کر دکھایا جو کہ ہائی سکول کا طالب علم ہے اس نے بائبل اور قرآن کے اوراق کو کسی طرح ڈی این میں تبدیل کیا اور اپنی دونوں رانوں میں انجیکٹ کر لیا ۔ جی ہاں ، اس …

Read More »

انسان بمقابلہ روبوٹ ایک تجزیہ

روبوٹس  چھوٹی مشینوں سے اب انسانوں کے جتنے بڑےسا ئزمیں دستیاب ہیں جو کہ دیکھنے میں بھی انسانوں جیسے ہی لگتے ہیں ۔ ہم ایک ایسی دنیا میں رہ رہے ہیں جہاں حقیقی اور حقیقی جیسا میں فرق بڑی تیزی سے ختم ہوتا جا رہا ہے۔اٹھارہویں صدی میں رہنے والے ان  کاموں کے بارے میں سوچ بھی نہیں سکتے تھے جو اب ہم ایک بٹن دبا کے کر سکتے ہیں ۔ روز مرہ کے کام اب اتنے آسان ہوگئے ہیں کہ کبھی تو …

Read More »

آئین سٹائن کا دماغ

اس صدی کے سب سے معروف سائنسدان البرٹ آئن سٹائن نے 17 اپریل 1955ء کو نیو جرسی کے پریسٹن ہسپتال میں وفات پائی۔ اپنی موت سے پہلے آئن سٹائن کی واضح ہدایات تھیں کہ اس کے دماغ اور جسم کو ریسرچ کے لئے استعمال نہ کیا جائے۔ وہ اپنی آخری تدفین تو چاہتا تھا مگر وہ یہ نہیں چاہتا تھا کہ لوگ اس کو پوجنے لگیں  اس لئے اس نے کہا کہ اس کی راکھ کو خاموشی سے بہا دیا جائے۔ …

Read More »

زحل اور اسکے دائرے

زحل پہ ایک دن دس گھنٹوں، تینتیس منٹوں اور اڑتیس سیکنڈوں پر محیط ہوتا ہے۔ سیارہ زحل کے امتیازی دائروں کا ناسا کے کےسینی سپیس کرافٹ نے بہت گہرائی سے مشاہدہ کیا ہے  اور اب ان مشاہدات سے سائنسدان اس عظیم سیارے کی اندرونی ساخت کے جائزے میں مدد لے رہے ہیں اور یہ پہلی دفعہ  ممکن ہو پایا ہے کہ سیارے کی گردش کے بارے میں کوئی معلومات ملی ہیں ۔ ریسرچرز نے  زحل کے دائروں کے اندر پیدا …

Read More »