Home / اردو ادب / شاعری / بچھڑنا ہے تو خوشی سے بچھڑو سوال کیسے،جواب چھوڑو (محسن نقوی)

بچھڑنا ہے تو خوشی سے بچھڑو سوال کیسے،جواب چھوڑو (محسن نقوی)

بچھڑنا ہے تو خوشی سے بچھڑو سوال کیسے،جواب چھوڑو
ملی ہیں کس کوجہاں کی خوشیاں ملے ہیں کس کو عذاب چھوڑو

نئے سفر پہ جو چل پڑے ہو مجھے خبر ہے کہ خوش بڑے ہو
ہے کون اجڑا تمہارے پیچھے یا کس کے ٹوٹے ہیں خواب چھوڑو

محبتوں کے تمام وعدے نبھائے کس نے بھللاٰئے کس نے
تمہیں پشیمانی ہو گی جاناں جو میری مانو حساب چھوڑو

ملے ہو مدت کے بعد جاناں تو کیسا شکوہ گلا بھی کیسا
تمہیں ملا ہے سکون کتنا ،ہوا میں کتنا خراب چھوڑو

دکھی دلوں کی پکار سننا بنا لو محسن عمل یہ اپنا
ہے اس میں تم کو گناہ کتنا ملے گا کتنا ثواب چھوڑو

محسن نقوی

About محمد سلیم

محمد سلیم ایک کمپیوٹر پروگرامر ہیں اور ایک سافٹ وئیر ہاوس چلا رہے ہیں۔ سائنس خصوصا فلکیات پر پڑھنا اور لکھنا ان کا مشغلہ ہے۔ ان کے مضامین یہاں کے علاوہ دیگر کئی ویب سائٹس پر بھی پبلش ہوتے ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *